قیدیوں سے یک جہتی سری نگر میں مظاہرہ

سری نگر… ریاست اور بھارتی جیلوں میں کشمیری قیدیوں کے نامساعد حالات کے خلاف سری نگر میں احتجاجی مظاہرہ کیا گیا اسیروں کی حالت زار اورنوجوانوں کی ہلاکتوں کے خلافمشترکہ مزاحتمی تنظیموں کی طرف سے احتجاج کیا گیا اور آبی گذر سے لال چوک تک جلوس نکالا گیا ۔مشترکہ مزاحمتی قیادت سے وابستہ قائدین و اراکین اور زندگی کے دوسرے شعبوں سے تعلق رکھنے والے لوگوں کی ایک بڑی تعدادنے آبی گذر سے لال چوک تک احتجاجی جلوس نکالا اورآزادی کے حق میں نعرے لگائے ۔حریت کانفرنس اور لبریشن فرنٹ سے وابستہ قائدین و اراکین جن میں حکیم عبدالرشید، غلام نبی ذکی، نور محمد کلوال،بشیر احمد بٹ ایڈوکیٹ،غلام رسول ڈار ایدھی،فیروز احمد خان،رفیق احمد اویسی،ایڈوکیٹ شیخ یاسر دلال، میر سراج الدین،شیخ عبدالرشید،بلال احمد صدیقی ،فاروق احمد سوداگر، محمد یاسین عطائی، مولوی بشیر احمد، بشیر احمد کشمیری، محمد صدیق شاہ، مشتاق احمد خان، پروفیسر جاوید، ساحل احمد وار، فاروق احمد شیخ، محمد صدیق، خواجہ فردوس وانی، سید محمد شفیع،امتیاز احمد شاہ، گلشن عباس، محمد شفیع لون ،محمد صدیق، محمد یوسف ، بشیر احمد درباری ، بشیر احمد بویا، گلزار احمد پہلوان، جاوید احمد بٹ،محمد اسحاق گنائی، نثار احمد جیلانی،عبدالرشید مغلو، عبدالستار اوررفیق احمد واروغیرہ شامل تھے، نے کشمیری اسیروں پر مظالم اور کشمیر میں جاری نسل کشی کے خلاف آبی گزرمیں ایک منظم احتجاجی مظاہرے کا اہتمام کیا ۔ ہاتھوں میں اسیروں پر ڈھائے جانے والے مظالم اور جبر وتشدد نیز جاری و ساری نسل کشی کے خلاف پلے کارڈ اٹھائے اور آزادی اور مزاحمت کے حق میں نعرے بلند کرتے ہوئے شرکائے جلوس نے آبی گزر سے لال چوک کی جانب مارچ کیاجہاں اس جلوس نے پرامن دھرنے کی شکل اختیار کی جس سے غلام نبی ذکی، حکیم عبدالرشید اور نور محمد کلوال نے خطاب کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں