بنک ملازمین سے شادی نہ کریں دارالعلوم دیوبند

نئی دہلی : دینی درسگاہ دارالعلوم دیوبند کا کہنا ہے کہ بینک میں کام کرنے والے کنبوں میں مسلمانوں کو شادی بیاہ کرنے سے بچنا چاہئے ۔ دار العلوم دیوبند کے اس فتوی کے بعد میڈیا میں ایک نئی بحث شروع ہوگئی ہے۔ خیال رہے کہ کچھ دنوں قبل دیوبند نے اپنے ایک اور فتوی میں کہا تھا کہ مسلم خواتین کو چست اور چمکیلے برقع نہیں پہننے چاہئے ، جو بھی موضوع بحث بن گیا تھا۔

در اصل دارالعلوم دیوبند سے ایک شخص نے سوال پوچھا تھا کہ شادی کیلئے چند ایسے کنبوں سے تجاویز آرہی ہیں ، جن کنبوں کے سربرہ بینک میں نوکری کرکے کماتے ہیں ۔ واضح طور پر ایسے کنبوں کی پرورش حرام کمائی سے ہوئی ہوگی ۔ تو کیا ایسے کنبوں میں شادی کرنا مناسب ہے اور ان کو فوقیت دی جاسکتی ہے۔

مسلمانوں کو بینک میں کام کرنے والی فیملیوں میں شادی کرنے سے بچنا چاہئے ، دار العلوم دیوبند کا فتوی

اس کے جواب میں دار العلوم دیوبند نے کہا ہے کہ ایسے کنبوں میں جہاں تک ہوسکے شادی بیاہ سے گریز کرنا چاہئے اور ان کو ترجیح نہیں دینی چاہئے ۔ کسی نیک گھرانے میں رشتہ تلاش کرنا چاہئے ۔

deoband fatwa

اپنا تبصرہ بھیجیں