جمہوریت اور آئین کو قربان کیا جاسکتا ہے

ریاست کیلئے جمہوریت اور آئین کو قربان کیا جاسکتا ہے،پرویز مشرف

اسلام آباد:سابق صدر پرویزمشرف کا کہنا ہے کہ جمہوریت کا حمامی ہوں لیکن ملک میں الیکشن نہیں سلیکشن کی ضرورت ہے،ریاست کیلئے جمہوریت اور آئین کو قربان کیا جاسکتا ہے۔

سابق صدر پرویز مشرف نے آج نیوز کے پروگرام جی فارغریدہ میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ انہیں پاکستان میں الیکشن ہوتے نظر نہیں آرہے ہیں اور ان کی خواہش بھی یہی ہے کہ ایسا نہ ہو،جس کی وجہ انہوں نے یہ بتائی، الیکشن ہوئے اور پھر وہی 2جماعتیں آگئیں تو ملک پرظلم ہوگا،یہ جماعتیں جے آئی ٹیز، نیب اور عدالتوں کو چلنے نہیں دیں گی۔

سابق صدر نے کہا کہ لشکر طیبہ بھی الیکشن میں آنا چاہتی ہے تو اچھی بات ہے،کشمیر میں سب سے زیادہ قربانیاں لشکر طیبہ نے ہی دی ہیں، مشرف نے حافظ سعید کی بھی خوب تعریفیں کیں۔

سابق صدر نے جمہوریت اور آئین کے مقابلے میں ریاست کو ترجیح دیتے ہوئے کہا کہ وہ سب سے پہلے پاکستان کی بات کرتے ہیں۔

مشرف نے کہا کہ سپریم کورٹ عبوری حکومت بنانے کیلئے اختیار دےاور اگر عبوری حکومت بنی تو وہ اس کی مدد کریں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ امریکا کی ہاں میں ہاں ملانے کے بجائے ہمیں افغانستان میں بیٹھے فضل اللہ کی حوالگی کا مطالبہ کرنا چاہئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں