ڈاکٹر فاروق حیدر کی یاد میں ایک تقریب

راولپنڈی۔۔ریاست جموں کشمیر کے چوٹی کے قومی لیڈر اور لبریشن فرنٹ کے بانی رہنما، شہید محمد مقبول بٹ اور قائد ِ تحریک امان اللہ خان مرحوم کے دیرینہ ساتھی ڈاکٹر فاروق حیدر کی یاد میں جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے سنٹرل انفارمیشن آفس ، چاندنی چوک ، راولپنڈی میں منعقد دعائیہ مجلس منعقد ہوئی مجلس میں لبریشن فرنٹ کے رہنماوئں نے مر حوم کے حق میں دعا ئے مغفرت کے علاوہ تحریک ِ آزادیٔ کشمیر میں گرانقدرت خدمات پیش کرنے پراُنہیں زبردست خراج عقیدت پیش کیا ۔ جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے وائس چیئرمین و بزرگ رہنما جناب حافظ انور سماوی کی صدارت میں منعقد دعائیہ مجلس میں وائس چیئرمین سلیم ہارون ، مرکزی سیکریٹری مالیات خواجہ منظوراحمد چشتی ، ممبر سپریم کونسل منطور احمد خان ، زونل نائب صدر خورشید احمد مرزا ، زونل نائب صدر محمد افضل بیگ ، سینئر رہنما سردار انور ، سابق زونل جنرل سیکریٹری سلیم بٹ اور محمد اشرف کے علاوہ دیگر کارکنان نے شرکت کی ۔ شرکاء نے مرحوم ڈاکٹر فاروق حیدر کی تحریک کے تئیں گرانقدر خدمات پر انہیں خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ مرحوم کی بے لوث قیادت کی بدولت تحریک ِ آزادی ٔ کشمیر کو عروج حاصل ہوا۔ شہید محمد مقبول بٹ ، قائد ِ تحریک امان اللہ خان اور سردار رشید حسرت کے ساتھ ملکر ابتداء میں مرحوم کا نبھایا ہواکردار کسی بھی طور فراموش نہیں کیا جا سکتا۔ حافظ انور سماوی صاحب نے مرحوم ڈاکٹر فاروق حیدر کی زندگی اور تحریک میں اُن کے کردار پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ تحریک ِ آزادی ڈاکٹر فاروق حیدر کا اُوڑنا بچھونا تھا ۔ انہوں نے کہا کہ وہ تحریک آزادی کے ستارے تھے اور وہ مقامی سمیت بین الاقومی سطح پر سر گرم تھے اور یہاں کے لوازمات اور ضروریات سے بخوبی واقف تھے ۔ انہوں نے کہا کہ 1947ء میں ریاست کے صوبے جموں سے ہجرت کے وقت جموں کے جنونی ہندؤں اور بھارتی ا فواج نے ڈاکٹر فاروق حیدر کے بیشتر افراد ِ خانہ کو شہید کیا جبکہ براستہ سیالکوٹ مرحوم اور اُن کی ہمشیرہ راولپنڈی پہنچنے میں کامیاب ہوئے اور بعد ازاں بڑی محنت کر کے اپنا مستقبل سنوارنے کے ساتھ ساتھ تحریک ِ آزادی میں بھی پیش پیش رہے۔

حافظ انور سماوی صاحب نے کہا کہ مرحوم ڈاکٹر فاروق حیدر نے تحریک ِ آزادی میں ایک اہم اور کلیدی کردار ادا کرتے ہوئے اپنے تمام تر وسائل یہاں تک کہ اپنی رہائش گاہ بھی ابتدائی مرحلے میں مقبوضہ کشمیر سے آنے والے کشمیری نوجوانوں کے لئے بیس کیمپ کے طور پر وقف رکھا ۔ شرکاء مجلس نے ڈاکٹر فاروق حیدر کو ایک پاکباز ، نہایت شریف النفس اور خودّار شخصیت قرار دیتے ہوئے کہا کہ مرحوم کی بے لوث قیادت اور ان کا کردار ہر محب وطن کشمیری بالخصوص لبریشن فرنٹ کے کارکن کے لئے قابل تقلید ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مرحوم کے ساتھ قربت کے نتیجے پر ہی اُن کی وفات پر قائد ِ تحریک امان اللہ خان کافی رنجیدہ اور آبدیدہ ہوئے اور کہا کہ آج میں ایک عظیم دوست سے محروم ہوا ہوں۔ دعائیہ مجلس میں ڈاکٹر فاروق حیدر مرحوم کے ساتھ ساتھ اُن کے اہل ِ خانہ کی طرف سے پیش کی جانے والی قربانیوں پر انہیں بھی زبردست خراج تحسین پیش کیا گیا۔ حافظ انور سماوی نے آخر پر مرحوم ڈاکٹر فاروق حیدر کے حق میں دعائے مغفرت کرتے ہوئے کہا کہ مرحوم کے ادھورے مشن کی تکمیل کے لئے قائد ِ انقلاب و چیئرمین جموں کشمیر لبریشن فرنٹ جناب محمد یاسین ملک کی قیادت میں کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کیا جائے گا ۔