بھارت اور پاکستان کشمیر سے فوجی انخلاء کا ٹائم ٹیبل دیں

چمبہ گلی بلوچ… جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے زونل صدر ڈاکٹر توقیر گیلانی نے کہا ہے کہ قومی آزادی کی جدوجہد عوام کی بھرپور شرکت سے ہی اپنی حتمی منزل سے ہمکنار ہوگی۔منقسم ریاست کے عوام طویل غلامی کے باعث بدترین سماجی پسماندگی، غربت اور بے روزگاری کا شکار ہیں ۔سیز فائر لائن پر کشمیری عوام کا قتلِ عام جاری ہے۔آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان میں نااہل اور عوام دشمن سیاستدانوں کو اقتدار دیکر قبضے اور لوٹ مار کو آسان بنایا جاتا ہے۔لبریشن فرنٹ آزادی کی جدوجہد کے ساتھ ساتھ آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان کے عوام کے بنیادی حقوق کی بحالی اور مسائل کے حل کیلئے مزاحمتی جدوجہد جاری رکھے گا۔وہ یہاں چمبہ گلی بلوچ میں لبریشن فرنٹ چمبہ گلی یونٹ کے زیرِ اہتمام جلسہ عام سے خطاب کر رہے تھے۔جلسہ عام میں عوام علاقہ کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔جلسہ سے قبل لبریشن فرنٹ کے قائدین کو گلی سے ایک ریلی کی شکل میں جلسہ گاہ لایا گیا۔ ریلی کے شرکاء کے کشمیر بنیگا خود مختار اور غیر ملکی فوجیو کشمیر ہمارا چھوڑ دو کے نعروں سے چمبہ گلی کی فضا گونج اٹھی۔جلسہ عام کی صدارت لبریشن فرنٹ ضلع سدھنوتی کے صدر قاری نصیر احمد نے کی جبکہ مہمانِ خصوصی زونل صدر ڈاکٹر توقیر گیلانی تھے۔سٹیج سیکریٹری کے فرائض وسیم یوسف نے سرانجام دیے۔جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے لبریشن فرنٹ کے زونل صدر ڈاکٹر توقیر گیلانی نے کہا کہ لبریشن فرنٹ چمبہ گلی کے دوستوں کی جدوجہد سے یہاں ایک سکول کی عمارت تعمیر ہوئی جو اس بات کا واضح ثبوت ہے کہ اگر ہم جدوجہد کریں تو مسائل کا حل نکل سکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ غلامی کی طوالت نے آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان میں سماجی و معاشی پسماندگی، غربت، بے روزگاری اور لاقانونیت کو جنم دیا ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ تمام مسائل آزادی کی جدوجہد کے ساتھ جڑے ہوئے ہیں اور آزادی کا مطلب ہی اپنے وسائل پر اپنا اختیار ہے۔انہوں نے کہا کہ سیز فائر لائن پر کشمیری عوام کا قتل عام جاری ہے اور منقسم ریاست کے دونوں اطراف موجود کٹھ پتلی حکومتیں اپنے اپنے قابضین کے قبضے کے دفاع میں مصروف ہیں۔ آزاد کشمیر کے صدر اور وزیر اعظم مسلسل آزادی کے خلاف اور غلامی کے حق میں بیان دے رہے ہیں جبکہ بھارتی مقبوضہ کشمیر میں فوجی جبر اور پولیس گردی اپنے عروج پر ہے۔انہوں نے کہا کہ نااہل اور کرپٹ سیاستدانوں نے پوری قوم کا بیڑہ غرق کر رکھا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہماری کسی مخصوص جماعت، کسی مخصوص سیاستدان یا کسی ملک سے کوئی دشمنی نہیں ہے بلکہ ہماری جنگ بھارت اور پاکستان کی حکمران اشرافیہ اور ریاست میں موجود انکے کاسہ لیس اور بوٹ پالشی سیاستدانوں کے خلاف ہے۔ انہوں نے کہا کہ بھارت اور پاکستان کا ریاست پر قبضہ غیر قانونی اور جبر کی بنیاد پر ہے اور دونوں ملکوں کے قبضے کو جائز قرار دینے والے سیاستدان وطن دشمن اورریاست کے عوام کے مجرم اور غدار ہیں۔ڈاکٹر توقیر گیلانی نے کہا کہ بھارت اور پاکستان کا قبضہ ہمارے گھروں تک سرایت کر چکا ہے اس لیے ہم سب کو اپنی آنے والی نسلوں کی بقا کیلئے آزادی کی جدوجہد میں اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے لبریشن فرنٹ ضلع سدھنوتی کے صدر قاری نصیر احمد، ضلع کوٹلی کے صدر راجہ اشفاق، شکیل چودھری ایڈوکیٹ، یوسف چودھری اور دیگر مقررین نے کہا کہ نام نہاد آزاد کشمیر حکومت عوام کے بنیادی مسائل حل کرنے میں مکمل ناکام نظر آتی ہے اور آزاد کشمیر کا صدر اور وزیر اعظم پاکستانی حکمرانوں کے جوتے پالش کرنے میں مصروف ہیں۔انہوں نے کہا کہ آزاد کشمیر کی کٹھ پتلی حکومت اپنے اختیارات سے تجاوز کرتے ہوئے عوام کے مسائل حل کرنے کے بجائے ریاست کو پاکستان یا بھارت کے ساتھ الحاق کروانے میں مصروف نظر آتی ہے جو نام نہاد ایکٹ 74ء کی بھی خلاف ورزی اور اپنے اختیارات سے تجاوز ہے۔مقررین نے کہا کہ چمبہ گلی کے سینکڑوں گھرانے اس دور میں بھی سڑک اور علاج جیسی بنیادی سہولتوں سے محروم ہیں ۔ مقررین نے مطالبہ کیا کہ چمبہ گلی سے تتہ پانی اور چمبہ گلی سے کوٹلی والی کچی سڑکوں کو فی الفور پختہ کیا جائے ورنہ لبریشن فرنٹ عوام علاقہ کے ساتھ مل کر حلقہ کے ایم ایل اے اور حکومت کے خلاف احتجاج کریگا۔مقررین نے کہا کہ چمبہ گلی میں ہائی سکول اور بی کلاس ڈسپنسری قائم کی جائے اور علاقے میں جنگلات کی کٹائی کو روک کر ٹمبر مافیا کو قانون کے کٹہڑے میں لایا جائے۔مقررین نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ لبریشن فرنٹ عوام کی شرکت کو یقینی بناتے ہوئے آزادی کی جدوجہد کو ہر محاذ پر جاری رکھے گا۔ مقررین نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا کہ وہ سیز فائر لائن پر بھارت اور پاکستان کی فوجوں کے ہاتھوں کشمیری عوام کے قتل عام کا نوٹس لے اور بھارت اور پاکستان کو مجبور کیا جائے کہ وہ ریاست سے اپنی اپنی افواج کے انخلاء کا ٹائم ٹیبل دیں اور ریاست میں ایک آزادانہ اور غیر جانبدارانہ ریفرنڈم کے ذریعے ریاست کے مستقبل کا فیصلہ کروایا جائے۔جلسہ عام سے سردار مشتاق،سردار آصف،بشارت مغل، سردار اویس، نعیم، نثار ملک اور دیگر مقررین نے بھی خطاب کیا جبکہ اس موقع پر متعدد نوجوانوں نے لبریشن فرنٹ میں شمولیت کا اعلان بھی کیا۔