ہمارے کوئی جارحانہ عزائم نہیں،شاہ محمود قریشی

ٹوکیو: پاکستان کے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے جاپان کے 3 روزہ دورے کے اختتام پرمیڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ یہ کسی بھی پاکستانی وزیرخارجہ کا 7 سال بعد جاپان کا پہلا دورہ ہے۔

وزیرخارجہ نے کہا کہ جاپانی قیادت کوپاکستان میں اقتصادی اصلاحات پربریفنگ دی جب کہ دورے کے دوران دونوں ملکوں میں تعلقات کی بحالی کےعزم کا اظہارکیا گیا۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ جاپان دوسری جنگ عظیم کے بعد بڑی اقتصادی طاقت بن چکا ہے، جاپان اپنی صنعت دوسرے ممالک میں منتقل کرنا چاہتا ہے، جاپانی صنعت کی چین سے پاکستان منتقلی پربات ہوئی، جاپان کواپنی صنعتیں پاکستان میں لگانے کی دعوت دی ہے۔

وزیر خارجہ کا مزید کہنا تھا کہ جاپانی وزیرخارجہ کومنی لانڈرنگ کے خلاف اقدامات سے آگاہ کیا، شاہ محمود قریشی نے کہا پاکستان ذمہ دارجوہری طاقت ہے، ہمارے کوئی جارحانہ عزائم نہیں، دنیا اعتراف کرتی ہے کہ پاکستان کے ہتھیارمحفوظ ہیں۔

وزیرخارجہ نے کہا کہ فوڈ پروسیسنگ انڈسٹری نہ ہونے سے زرعی آمدن متاثرہورہی ہے، جاپان 20 کروڑآبادی کی فوڈ انڈسٹری سے فائدہ اٹھائے، جاپانی قیادت سے ایف اے ٹی ایف پرتفصیلی بات چیت کے علاوہ پاکستان کو ایف اے ٹی ایف گرے لسٹ سے نکالنے پربات ہوئی جب کہ جاپانی قیادت سے دہشت گردوں کی مالی معاونت روکنے پر بھی با

اپنا تبصرہ بھیجیں